بنیادی صفحہ » الیکشن »

شہباز شریف

Try WordPress Hosting Free for 30 Days | Cloudaccess.net

شہباز شریف

سینئر رہنما و سیاستدان
شہباز شریف 23 ستمبر 1951کو لاہور میں پیدا ہوئے۔ ان کے والد میاں محمد شریف ایک صنعت کار تھے۔ ان کے والد امرتسر سے تھے، جو تقسیم ہند کے بعد پاکستان ہجرت کر آئے۔ ان کی والدہ کا نام شمیم اختر تھا۔ ان کے دو بھائی عباس شریف اور نواز شریف ہیں۔ نواز شریف تین بار وزیر اعطم پاکستان منتخب ہو چکے ہیں۔ ان کی بھابھی کلثوم نواز اس وقتممبر قومی اسمبلی ہیں۔ کلثوم نواز کو تین بار خاتون اول پاکستان کا اعزا ز ملا، شہباز شریف کا ایک بیٹا حمزہ شہباز شریف ( ممبر قومی اسمبلی ) اور بھتیجی مریم نواز اس وقت سیاست میں ہیں۔
شہباز شریف پاکستان مسلم لیگ (ن) کی طرف 2018کے انتخابات میں وزیر اعظم کے امیدوار ہیں۔
شہباز شریف 1988 میں پنجاب صوبائی اسمبلی اور 1990میں قومی اسمبلی پاکستان کے رکن منتخب ہوئے۔ 1993 پھر پنجاب صوبائی اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے اور قائد حزب اختلاف نامزد ہوئے۔ 1997 میں تیسری بار رکن اسمبلی منتخب ہوئے، شہباز شریف نے 20 فروری 1997کو پنجاب کے وزیر اعلیٰ کے طور پر حلف اٹھایا۔
پاکستان میں 1999کے مارشل لا کے بعد، شہباز شریف نے سعودی عرب میں جلا وطنی کی زندگی گزاری، اور آخرکار 2007میں پاکستان واپسی ہوئی۔ پاکستان کے عام انتخابات 2008میں کامیابی کے بعد شہباز شریف دوسری بار وزیر اعلیٰ پنجاب منتخب ہوئے، 2009 میں جب صدر آصف علی زرداری نے گورنر راج کا نفاذ کر کے سلمان تاثیر کو گورنر پنجاب نامزد کیا تو شہباز شریف معزول ہو گئے۔ شریف برادران نے عدالت کی بحالی کے لیے یوسف رضا گیلانی کی حکومت کی خلاف لانگ مارچ کیا، جس کس نتیجے میں عدلیہ بحال ہو گئی، اور گورنر راج ختم ہو گیا۔ شریف کے دوسرے دور میں بنیادی ڈھانچے میں ترقی پر توجہ مرکوز کی گئی۔
شہباز شریف 1985میں ایوان صنعت و تجارت لاہور (لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری)کے صدر رہے، 1988–1990میں ممبر پنجاب اسمبلیمنتخب ہوئے، 1990–1993میں ممبر قومی اسمبلی منتخب ہوئے، 1993–1996 میں ممبر پنجاب اسمبلی منتخب ہوئے اور قائد حزب اختلاف بنے، 1997سے 1999تک رکن پنجاب اسمبلی اور وزیر اعلیٰ پنجاب مقرر ہوئے، اگست 2002 میں صدر پاکستان مسلم لیگ ن مقرر ہوئے، 2008کے انتخابات کے بعد ضمنی انتخابات میں جیت کر پنجاب کے وزیر اعلیٰ بنے۔مئی 2013کے انتخابات کے بعد آپ پھر پنجاب کے وزیر اعلیٰ بنے، اور تاحال اسی عہدے پر فائز ہیں۔
ان کا دور نہایت سخت انتظام کے لیے مشہور ہے ،جس میں انہوں نے لاہور کی شکل بدلنے کی کوشش کی۔ میٹرو بس چلائی اور اورنج ٹرین کا منصوبہ زیر تکمیل ہے۔

اپنی رائے دیں

%d bloggers like this: