Try WordPress Hosting Free for 30 Days | Cloudaccess.net

تالپور خاندان

پاکستان کے حکمران خاندان
یہ خاندان 1783سے اب تک سندھ میں حکمران چلا آرہا ہے
منصور مہدی
تالپور خاندان قبیلہ تالپور کا ایک شاہی خاندان تھا جس نے سندھ اور موجودہ پاکستان کے کچھ حصوں کو فتح کر کے اس پر 1783سے 1843 تک حکومت کی تھی۔ تالپور فوج نے 1783 میں کلہوڑا خاندان کو ہالانی کی جنگ میں شکست دے کر سندھ پر حکومت کی اس کے بعد 1843 میں برطانوی حملہ آوروں نے میانی کی جنگ میں تالپور خاندان کو شکست دی۔
بلوچ قبیلہ تالپور جن کا جد اعلیٰ شہداد تالپور تھا۔ جب بلوچ کلہوڑا فوج میں بھرتی ہوئے تو شہداد تالپور سپہ سالار بن گیا۔ بعد میں کلہوڑوں نے تالپور سرداروں کو قتل کرایا۔ تالپوروں نے جنگ ہالانی میں کلہوڑوں کو شکست دے کر سندھ پر قبضہ کیا۔
ان کے چھ حکمرانوں نے 1843تک حکومت کی اور سندھ میں تین ریاستیں حیدر آباد، میر پور خاص اور خیر پور قائم کیں ،مگر ان ریاستوں میں اتحاد نہ تھا۔ کچھ عرصہ کابل کو خراج دیتے رہے۔ پہلی افغان جنگ ( 1838 – 1842 ) میں حیدر آباد اور میر پور خاص سے انگریزوں کے تعلقات بگڑ گئے البتہ خیر پور نے انگریزوں کی طرفداری کی۔ 1843 میں برطانوی فوج نے چارلس جیمر نیپئر کی زیر کمان حیدر آباد اور میر پور خاص کے تالپوروں میانی کی خونی جنگ میں شکست دے کر پورے سندھ پر قبضہ کر لیا جو آزادی پاکستان تک برقرار رہا۔
اس خاندان کی ایک اہم شخسیر میررسول بخش تالپور تھیں، جو شہید ذوالفقار علی بھٹو کے قریبی ساتھی تھے،یہ23 اکتوبر 1920میں پیدا ہوئے اور یکم مئی 1982کو اس دنیا سے رخصت ہوئے۔انہوں نے دہلی کے جامعہ ملیہ اور کراچی کے سندھ مدرستہ الاسلام سے ابتدائی تعلیم حاصل کی۔ ان کی سیاسی زندگی کا آغاز میونسپل کمیٹی حیدرآباد کی رکنیت سے ہوا بعدازاں وہ اس کمیٹی کے چیئرمین بھی بنے۔
1958میں انہوں نے عوامی لیگ میں شمولیت اختیار کی اور 1964کے صدارتی انتخابات میں محترمہ فاطمہ جناح کی حمایت کی۔ 1967میں جب پاکستان پیپلزپارٹی کا قیام عمل میں آیا تو وہ اس کے اساسی ارکان میں شامل ہوئے اور پیپلزپارٹی سندھ کے پہلے چیئرمین مقرر ہوئے۔
1970میں وہ سندھ اسمبلی کے رکن منتخب ہوئے اور 29 اپریل 1972سے 13 فروری 1973تک صوبہ سندھ کے گورنر رہے۔ پھر پیپلزپارٹی کے چیئرمین کے ساتھ بعض معاملات میں اختلافات کی بنا پر وہ پارٹی کی رکنیت اور صوبہ سندھ کی گورنری دونوں سے مستعفی ہوگئے۔
مئی 1981میں وہ صوبہ سندھ کے سینئر وزیر مقرر ہوئے۔ اپنے انتقال کے وقت وہ اسی عہدے پر فائز تھے۔
اسی خاندان کے ایک اور فرد نواب میریوسف تالپور این اے 228سے ممبر قومی اسمبلی ہیں جبکہ ان کے بیٹے نواب میر تیمور تالپور پی ایس 68 عمرکوٹ سے پیپلز پارٹی کی ٹکٹ پر ممبر صوبائی اسمبلی ہیں۔ اللہ بخش تالپور پی ایس 56بدین سے ممبر صوبائی اسمبلی ہیں، میر حیات خان تالپور پی ایس 65میر پور خاص سے ممبر ہیں۔ میر منور علی تالپور این اے 227میر پور خاص سے ممبر قومی اسمبلی ہیں، ان کی بیگم فریال تالپور، جو سابق صدر آصف علی زرداری کی بہن ہیں، این اے 207لاڑکانہ سے ممبر قومی اسمبلی ہیں۔

اپنی رائے دیں

%d bloggers like this: