بنیادی صفحہ » الیکشن »

حنا ربانی کھر

حنا ربانی کھر

پاکستان کی خواتین سیاستدان
منصور مہدی
حنا ربانی کھر پاکستان کی پہلی خاتون وزیر خارجہ رہی ہیں۔انھوں نے پاکستان مسلم لیگ ق کی رکن کی حیثیت سے سیاست کے میدان میں قدم رکھا تھا اور 2002 کے انتخابا ت میں جنرل سیٹ پر کامیاب ہو کر رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئیں۔ 2008 میں انھوں نے پاکستان پیپلز پارٹی کے ٹکٹ پرمظفّر گڑھ کی قومی اسمبلی کی نشت پر کامیابی حاصل کی اور ممبر منتخب ہوئیں۔یہ نہ صرف پاکستان کی پہلی خاتون وزیر خزانہ رہی ہیں بلکہ دنیا کی پہلی کم عمر خاتون وزیر خارجہ بھی ہیں۔
انھیں یہ بھی اعزاز حاصل ہے کہ بحیثیت خاتون پہلی مرتبہ ملکی بجٹ بھی پیش کیا۔ جنوری2013 میں انھوں پاکستان کی نمائندگی کرتے ہوئے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں تقریر بھی کی۔ حنا ربانی کھر نت نئے ڈیزائن، فیشن اور ہینڈبیگز کی وجہ سے دنیا بھر منفرد شہرت رکھتی ہی ہیں۔
حنا ربّانی کھر 1977 میں ملتان میں پیدا ہوئیں۔یہ رشتہ میں غلام مصطفے کھر کی بھانجی ہے۔انھوں نے 1999 میں لاہور یونیورسٹی آف مینجمنٹ سائنسز سے معاشیات میں گریجویشن کیا اور 2001 میں ے ایم بی اے کی سند حاصل کی۔
2002 میں ان کے سیاست میں آنے کی وجہ ان کے والد کے پاس پی اے کی ڈگری نہ ہونا تھی۔ کیونکہ اس وقت قانون کے مطابق الیکشن لڑنے کے لیے کم از کم بی اے ہونا ضروری تھا چنانچہ انھوں نے اپنے والد کی جگہ الیکشن میں حصہ لیا۔ 2013 کے انتخابات میں انھوں نے پاکستان پیپلز پارٹی کے ٹکٹ پر خواتین کی مخصوص سیٹوں پرحصہ لیا۔
سینٹ کی قائمہ کمیٹی انسانی حقوق کے اجلاس میں کمیٹی میں حنا ربانی کھر کے دور کی اقوام متحدہ کی طرف سے دی جانے والی رپورٹ پھر سے زیر بحث رہی جس میں زبردستی اغوا کیے گئے افراد کے حوالے سے بنائے جانے والے کمیشن کی رپورٹ کو پبلک کرنے کا مطالبہ کیا، کمیٹی نے اغوا کیے گئے افراد کے معاملے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا گیا۔
پاکستان پیپلز پارٹی کے سابق رہنما رہنما غلام مصطفی کھر کی پی ٹی آئی میں شمولیت کے بعد ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ حنا ربانی کھر اور ان کے والد غلام نور ربانی کھر بھی پاکستان تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کر رہے ہیں، اگرچہ حنا ربانی کھر اور ان کے قریبی ذرائع نے خبروں کی تردید کی ہے ، ان کے قریبی ذرائع کے مطابق سابق گورنر و وزیر اعلیٰ پنجاب غلام مصطفیٰ کھر کی تحریک انصاف میں شمولیت ان کا اپنا ذاتی فیصلہ ہے اور اس حوالے سے ان کے بھائی نور ربانی کھر اور بھتیجی حنا ربانی کھر کا کوئی کردار نہیں۔
رواں ماہ میں ملک کی موجودہ صورتحال پر حنا ربانی کھر آرمی چیف اور فوج سے ایسا مطالبہ کردیا کہ جس پر آصف زرداری بھی حیران رہ گئے، انھوں نے کہا کہ فوج اسلام آباد میں نہیں ،راولپنڈی میں اچھی لگتی ہے، چیف جسٹس ہسپتالوں اور سکولوں کے دورے تو کریں مگر فوری انصاف کی جو ذمہ داری آئین نے انہیں دی ہے، اسے پورا کرنے پر بھی توجہ دیں،
انھوں نے کہا کہ افواج پاکستان نہ صرف ملک بلکہ ساری دنیا میں اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوا چکی ہے ، قیام امن کیلئے ملک ہی نہیں بلکہ دنیا میں بھی افواج پاکستان کا اہم کردار ہے ، فوج کا کام سیاست نہیں اور سیاستدانوں کے پیدا کردہ خلا کو عوام نے پر کرنا ہوتا نہ کہ فوج نے۔ فوج ملک کی سلامتی اور اس کے دفاع میں ایک اہم فریق ہے جس کو تسلیم کرتے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ٹیسٹ کیس میں یہ بات ثابت ہوئی ہے کہ جب تک ہر ادارہ اپنا کام بخوبی سر انجام نہیں دے گا اور اپنے کام کی ہی طرف توجہ نہیں دے گا تب تک پاکستان ترقی نہیں کر سکتا۔اس لئے ہر ادارہ کو اپنا کردار ادا کرنا ہو گا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

%d bloggers like this: