بنیادی صفحہ » تجزیہ »

انتخابی مہم کا وقت ختم، تمام سیاسی جماعتیں جیت کیلئے پُرامید

Try WordPress Hosting Free for 30 Days | Cloudaccess.net

انتخابی مہم کا وقت ختم، تمام سیاسی جماعتیں جیت کیلئے پُرامید

پاکستان میں 25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات کے پیش نظر سیاسی جماعتوں و امیدواروں کی مہینوں سے جاری انتخابی مہم کا وقت ختم ہوگیا۔

خیال رہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) کے ضابطہ اخلاق کے مطابق الیکشن کے دن سے 24 گھنٹے قبل انتخابی مہم چلانے پر پابندی عائد کردی جاتی ہے جس کے بعد کسی بھی امیدوار یا سیاسی جماعت کو انتخابی مہم چلانے کی اجازت نہیں ہوتی۔

الیکشن کمیشن کے مطابق رات 12 بجے کے بعد سے سیاسی جماعتوں کی تشہیری مہم بھی خلاف ورزی تصور کی جائے گی اور ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر ایک لاکھ روپے جرمانہ، 2 سال قید یا دونوں سزائیں ہوسکتی ہیں۔

انتخابی مہم کے آخری دن ملک بھر میں تقریباً تمام بڑی سیاسی جماعتوں نے پاور شو کیا۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) اور پاکستان مسلم لیگ (ن) نے قومی اسمبلی کی آدھی سے زائد نشستیں رکھنے والے اور عام انتخابات میں جیت کے لیے اہم کردار ادا کرنے والے صوبے پنجاب کے بڑے شہروں میں جلسے کیے۔

مسلم لیگ (ن) کی انتخابی مہم کا اختتام ڈیرہ غازی خان میں ہوا

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف نے انتخابی مہم کے آخری روز ڈیرہ غازی خان، جہاں سے وہ قومی اسمبلی کی نشست کے امیدوار بھی ہیں، میں جلسے سے خطاب کیا۔

دریں اثناء شہباز شریف کے صاحبزادے حمزہ شہباز نے لاہور میں موچی گیٹ سے داتا دربار تک ریلی نکالی۔

تحریک انصاف کی انتخابی مہم کا اختتام داتا دربار پر ہوا

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے لاہور کے مختلف علاقوں میں عوامی جلسوں سے خطاب کیا اور اپنی انتخابی مہم کا اختتام داتا دربار پر منعقدہ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

بلاول بھٹو نے شمالی سندھ کے دورہ کرتے ہوئے انتخابی مہم کا اختتام کیا

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے شمالی سندھ کا دورہ کرتے ہوئے مختلف علاقوں میں خطاب کیا اور اپنی انتخابی مہم کا اختتام بھٹو کے مزار گڑھی خدا بخش کے مزار پر فاتحہ خوانی کرتے ہوئے کیا۔

بلاول بھٹو زرداری نے پیر کو اپنی مصروفیات کا آغاز لاڑکانہ سے کیا جس کے بعد وہ نو ڈیرو، رتو ڈیرو اور قمبر شہداد کوٹ گئے تھے۔ انہوں نے شکار پور، سجاول اور جیکب آباد کے 15 چوک پر خطاب بھی کیا۔

متحدہ قومی موومنٹ کا لیاقت آباد میں جلسہ

متحدہ قومی موومنٹ-پاکستان نے کراچی کے علاقے لیاقت آباد میں جلسہ کرکے اپنی انتخابی مہم کا اختتام کیا۔

انتخابی جلسے کے دوران ایم کیو ایم کے کنوینر خالد مقبول صدیقی سمیت فاروق ستار و دیگر رہنماؤں نے عوام سے خطاب کیا۔

دیگر جماعتوں میں مذہبی جماعتوں کے اتحاد متحدہ مجلس عمل نے اسلام آباد کے جی 10 سیکٹر میں انتخابی جلسہ کرتے ہوئے اپنی انتخابی مہم کا اختتام کیا جس میں جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق نے عوام سے خطاب بھی کیا جبکہ پاک سر زمین پارٹی (پی ایس پی) نے کراچی کے مختلف علاقوں میں ریلیاں نکالیں جس کا اختتام گلشن اقبال میں قائم ریلوے گراؤنڈ میں جلسہ کرتے ہوئے ہوا۔

پیمرا کی نشریاتی اداروں کو ہدایات

پاکستان الیکٹرونک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) نے بھی ای سی پی کی ڈیڈ لائن کے اختتام پر نشریاتی اداروں کو ہدایت کی کہ وہ انتخابی مہم کا وقت ختم ہونے کے بعد کسی بھی قسم کے انتخابی اشتہارات نہ چلائیں۔

پیمرا کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ ’تمام ٹی وی چینلز اور ریڈیو پر آج 23 اور 24 جولائی کی درمیانی شب کے بعد کسی بھی قسم کا انتخابی مواد، سروے اور تجزیوں کو نشر نہیں کیا جائے گا‘۔

انتخابی مہمات میں پیش آنے والے اہم واقعات

• 10 جولائی کو پشاور کے علاقے یکہ توت میں عوامی نیشنل پارٹی کی انتخابی مہم کے دوران خودکش حملے سے صوبائی اسمبلی کے حلقہ 78 کے امیدوار اور بشیر بلور کے صاحبزادے ہارون بلور سمیت 20 افراد جاں بحق اور 48 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔

• 13 جولائی کو بلوچستان کے ضلع مستونگ میں بلوچستان عوامی پارٹی (بی اے پی) کے امیدوار کے قافلے میں بم دھماکے سے امیدوارسراج رئیسانی سمیت 128افراد جاں بحق اور 200 سے زائد زخمی ہوگئے۔ سراج رئیسانی سابق وزیراعلیٰ بلوچستان اسلم رئیسانی کے چھوٹے بھائی تھے۔ مستونگ میں ہونے والا خونریز حملہ 2014 میں پشاور کے آرمی پبلک اسکول (اے پی ایس) میں ہوئے حملے کے بعد خوف ناک ترین ہے۔

• 13 جولائی کو مستونگ بم دھماکے سے کچھ گھنٹے قبل ہی خیبر پختونخوا کے ضلع بنوں میں سابق وفاقی وزیر اور خیبر پختونخوا کے سابق وزیر اعلیٰ اکرم خان درانی کے قافلے کے قریب بم دھماکے کے نتیجے میں 4 افراد جاں بحق اور 13 زخمی ہوگئے تھے تاہم سابق وزیر محفوظ رہے۔

• 22 جولائی کو صوبہ خیبرپختونخوا کے علاقے ڈیرہ اسمٰعیل خان (ڈی آئی خان) میں ہونے والے خود کش حملے میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے انتخابی امیدواراکرام اللہ خان گنڈاپور اور ان کے ڈرائیور جاں بحق جبکہ ان کے محافظ زخمی ہوگئے تھے۔

اپنی رائے دیں

%d bloggers like this: