جینز ورکنگ ویمن میں تیزی سے مقبول ہونے لگی

0

لباس شخصیت کا آئینہ ہوتا ہے اور لڑکوں کی نسبت لڑکیاں اپنے لباس پر زیادہ توجہ دیتی ہیں آج کل نوجوان لڑکیوں اور ورکنگ ویمنز میں جینز پہننے کا رجحان بڑھ رہا ہے۔رپورٹ کے مطابق مییا کی تیز رفتار ترقی ہمارے معاشرے کوسماجی اور اقتصادی طور پر متاثر کررہی ہے دوسری طرف خواتین ڈیزائنر کی بڑھتی ہوئی تععداد اور ان کے ہر روز نمائشوں کے انعقاد بھی نوجوان نسل کو فیشن کی طرف مائل کررہے ہیں۔ اب کالج اور یونیورسٹیز لیول پر طالبات جینز اورٹراؤزر کوبڑے شوق سے پہن رہی ہیں اور اس کا فیشن مڈل اور ایلیٹ کلاس میں آج کل بہت ان ہے ہر روز بدلتی دنیا کے ساتھ فیشن بھی اپنا رنگ بدل رہے ہیں اور اس کی جھلک پاکستان کے روایتی معاشرے میں بھی دیکھا جاسکتا ہے نئی نسل اپنے آپ کو ماڈرن اور روشن خیال ثابت کرنے کے لئے اسی فیشن کو بڑی تیزی سے قبول کررہی ہے اور اب ان کی دیکھا دیکھی ورکنگ ویمن بھی جینز کو بڑی تیزی کے ساتھ اپنے لباس کا حصہ بنا رہی ہیں یہ جہاں پہننے میں آسان ہے تو وہاں ماڈرن بھی بناتی ہے اس کا سب سے بڑا فائدہ یہ ہے کہ اس کو ہر قسم کی تقریبات کے موقع پر پہنا جاسکتا ہے اور اس پر ہر قسم کے کرتے سوٹ کرتے ہیں جبکہ جینز کے مقبول ہونے کی وجہ یہ بھی ہے کہ اسے ہر موقع پر پہنا جاسکتا ہے خواتین ڈیزائنر کی پسند کو مدنظر رکھتے ہوئے اب اس کو مختلف کپڑوں کی ورائٹی اور دیدہ زیب رنگوں میں متعارف کرا رہی ہیں پاکستانی ڈراموں کے بدلتے ہوئے مزاج بھی جینز کو مقبول بنانے میں اہم کردار ادا کررہے ہیں اب جینز شلوار سٹائل میں بھی دیکھنے کو م لتی ہے پہلے اس کو صرف ایلیٹ کلاس کا لباس سمجھا جاتا تھا لیکن اب یہ ایلیٹ کلاس سے ہٹ کر مڈل کلاس کی زینت بن رہا ہے جب کوئی فیشن مڈل کلاس میں مقبول ہوتا ہے تو پھر وہ ہر طرف اپنے رنگ بکھیرتا ہے ایسا ہی جینز کیساتھ ہورہا ہے اب شلوار کی جگہ جینز شارٹ اورلمبی طرز کے کرتے اس کے ساتھ عام پہنے جارہے ہیں۔ اب مڈل کلاس میں شعوری تبدیلی کا سب سے زیادہ فائدہ پاکستانی خواتین اٹھا رہی ہیں۔

اپنی رائے دیں

%d bloggers like this: